ہندوستان نے سن 2016 میں ماریشیس حکومت کو ایچ اے ایل کے ذریعہ تیار کردہ ایک دھرو اور دو چیتک ہیلی کاپٹر تحفے میں دیئے تھے۔

ایسے وقت میں جب ہندوستان کے وزیر اعظم نریندر مودی ملک میں دفاعی صنعت سمیت تمام شعبوں میں آٹمانیربھیر بھارت کے لئے دباؤ ڈال رہے ہیں ، موریشیس نے برتن سے سکیمڈ تیل نکالنے کے لئے 'میڈ اِن انڈیا' ہیلی کاپٹر تعینات کیے۔ ڈبلیو ای یو کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ہندوستان نے سن 2016 میں ماریشیس حکومت کو ہندوستان ایروناٹکس لمیٹڈ (ایچ اے ایل) کے ذریعہ تیار کردہ ایک دھرو اور دو چیتک ہیلی کاپٹر تحفے میں دیئے تھے۔ مارچ 2017 تک ہندوستانی مسلح افواج کے لئے 216 سمیت کل 228 دھرو ہیلی کاپٹر تیار کیے گئے تھے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ یہ نیپال آرمی ، ماریشیس پولیس اور مالدیپ کو فراہم کیا گیا ہے۔ ایچ اے ایل نے 1962 میں جب چتک ہیلی کاپٹروں کی تیاری شروع کی جب اس نے سوڈ ایوی ایشن (ایم / ایس ایئربس) کے ساتھ معاہدہ کیا۔ ڈبلیو ای یو کی رپورٹ کے مطابق ، مکھی کی حالت میں پہلا چیتک 1965 میں پہنچایا گیا تھا۔ ماریشس کے تیل کے اخراج کو صاف کرنے کے لئے استعمال کرنے والا ایک چیتک 1987 میں دیا گیا تھا۔ اس سے قبل بھارت نے موریشس میں سامان اور 10 رکنی ٹیم بھیجی تھی جس سے نمٹنے کے لئے تیل کے پھیلنے کو جو ماحولیاتی ہنگامی صورتحال قرار دیا گیا ہے۔

Read the full report in WION